News Ticker

Quran urdu translation only Quran with Urdu translation Para No 09 10 11

By Sadqe Ya Rasool Allah - Thursday, 24 May 2018 No Comments

Quran urdu translation only  Quran with Urdu translation  Para No  09 10 11



Quran urdu translation only  Quran with Urdu translation  Para No  09 10 11





سحری کیوں کرنا چاہیئے؟
یُوں تو اکثر لوگ یہ خیال کرتے ہیں کہ روزہ رکھنا ہو تو سحری کے وقت کھانا بہتر ہے، ذرا دِین داری کا خیال ہو تو کہا جاتا ہے کہ سُنّت ہے کہ سحر کے وقت کھایا جائے، اور اگر پہلے کھا کر سو لیا جائے تو بھی کوئی خاص مُضائقہ نہیں، آئیے ذرا اِن باتوں کا سُنّت کی روشنی میں جائزہ لیا جائے-
 
▪انس بن مالک رضی اللہ عنہُ کا کہنا ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا سحر ی کیا کرو ، کیونکہ سحری کرنے میں یقینا برکت ہے-
( صحیح البُخاری/حدیث ١٩٢٣ /کتاب الصوم/باب٢٠، صحیح مُسلم حدیث ١٠٩٥ / کتاب الصیام/باب٩ )
نبی کریم ﷺ نے سحری میں برکت ہونے کی خبر دِی ہے اور اِسکو نہ چھوڑنے کی ترغیب دی ہے ، اِس لئیے یہ معاملہ مُضائقے یا غیر مُضائقے کا نہیں ، بلکہ اِس سے بڑھ کر ہے-

▪کہیں آپ اُن میں سے تو نہیں جو اپنے آپ کو سحری کی برکت سے محرُوم رکھتے ہیں؟
عَمر بن العاص رضی اللہ عنہُ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ہمارے اور اہلِ کتاب (یہودیوں اور عیسائیوں) کے روزوں میں فرق کرنے والی چیز سحری کا کھانا ہے-
( صحیح مُسلم ، حدیث ، ١٠٩٦ )

▪رسول اللہ ﷺ نے سحری کے کھانے کے بارے میں فرمایا بے شک یہ برکت جو اللہ نے تُم لوگوں کو عطا کی ہے لہذا اسے چھوڑو نہیں- ( سُنن النسائی/کتاب الصیام/باب ٢٤ )

▪عبداللہ ابن عَمرو ابن العاص رضی اللہ عنہ ُ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ فرمایا سحری ضرور کرو خواہ ایک گھونٹ پانی سے ہی کرو-
( صحیح ابن حبان/کتاب الصوم/باب السحور )

▪عبداللہ ابن عُمر ابن الخطاب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا بے شک سحری کرنے والوں پر اللہ رحمت کرتا ہے اور اللہ کے فرشتے دُعا کرتے ہیں-
( صحیح ابن حبان/ کتاب الصوم/باب السحور)

نوٹ : سحری کا کھانا چھوڑنے والا نہ صرف اِن فائدوں سے محروم ہو جاتا ہے بلکہ رسول اللہ ﷺ کے احکام کی خلاف ورزی، اور کافروں کی نقالی کا مُرتکب بھی ہو جاتا ہے-
ذرا غور فرمائیے کہ رسول اللہ ﷺ کے فرمانے کے مُطابق مسلمانوں اور اہلِ کتاب یعنی یہودیوں اور عیسائیوں کے روزوں میں سحری کا کھانا ہی فرق کرنے والی چیز ہے، اور رسول اللہ ﷺ نے سحری کھانے کے بارے میں کتنی تاکید فرمائی ہے اور کتنی خوش خبریاں دی ہیں، اس لئے کہیں آپ اُن میں سے تو نہیں جو رات گئے کھانا کھا کر لمبی تان کر سو جاتے ہیں تا کہ سحری کرنے میں نیند خراب نہ ہو؟ اب سحری کی برکت بھی گئی ؛ کافر اور مسلمان کے روزے کا فرق بھی نہ رہا ؛ فجرکی نماز بھی گئی ؛ صِرف بھوکا پیاسا رہنا ہی تو روزہ نہیں!

▪سحری کا وقت کب تک ہے؟
اللہ کا فرمان ہے :
اور کھاؤ اور پیؤ یہاں تک کہ فجر کے وقت میں سے تمہارے لئیے سفید دھاگہ کالے دھاگے میں سے واضح ہو جائے-
( سُورت البقرہ /آیت ١٨٧ ) 

▪عدی بن حاتم رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ سے کہا اے اللہ کے رسول ﷺ میں اپنے تکیے کے نیچے دو دھاگے رکھتا ہوں ، سفید دھاگہ اور کالا دھاگہ ، تا کہ دِن میں سے رات کو جان سکوں- تو رسول اللہ ﷺ نے کہا ( تمہارا تکیہ بہت کُشادہ ہے ، وہ تو رات کا کالا پن اور دِن کی سُفیدی ہے-
یعنی آیت سے مُراد کالے اور سفید دھاگے کا الگ الگ نظر آنا نہیں بلکہ رات اور دِن کا الگ الگ ہونا ہے-
( صحیح مُسلم ، حدیث ١٠٩٠ )

▪زید بن ثابت رضی اللہ عنہُ کا کہنا ہے کہ ہم نے رسول اللہ ﷺ کے ساتھ سحری کی اور پھر نماز کے لئیے اُٹھے ، ( زید بن ثابت رضی اللہ عنہُ سے ) پوچھا گیا ؛ نماز اور سحری کے درمیان کتنا وقت تھا ؛ اُنہوں نے جواب دِیا ؛ پچاس آیات کے برابر ) ( یعنی جتنا وقت پچاس آیات پڑہنے میں لگتا ہے-
( صحیح البُخاری ، حدیث ، ١٩٢١ ، صحیح مُسلم ، حدیث ، ١٠٩٧ )

▪ابو ہُریرہ رضی اللہ عنہُ کا کہنا ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا جب تُم میں سے کوئی اذان سُنے اور کھانے کا برتن اُسکے ہاتھ میں ہو تو وہ برتن رکھے نہیں جب تک اُس میں سے اپنی ضرورت پُوری نہ کر لے-
( سُنن ابو داؤد ، حدیث ، ٢٣٥٠ )
یعنی اگر سحری کھاتے کھاتے اذان شروع ہو گئی اور ابھی کھانے کی حاجت ہے تو جو کھانے کی چیز ہاتھ میں ہے اُسے چھوڑنے کی بجائے کھا لیا جائے ،لیکن اِسکا یہ مطلب ہر گِز نہیں کہ اذان سے کُچھ لمحات پہلے ہاتھوں میں چیزیں تھام لی جائیں تا کہ دیر تک کھایا جاسکے-

▪ابو ہُریرہ رضی اللہ عنہُ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا اِیمان والے کے لئیے بہترین سحری کھجور ہیں-
( صحیح ابنِ حبان ، حدیث ، ٨٨٣ ، سلسلہ احادیث الصحیحہ ، حدیث ، ٥٦٢ ،سُنن ابو داؤد ، حدیث ، ٢٣٤٢ )



Tags:

No Comment to " Quran urdu translation only Quran with Urdu translation Para No 09 10 11 "